ریگولیٹری اداروں کا کنٹرول وزارتوں سے لیکر کابینہ ڈویژن کو دینے کی تجویز

Rate this post

 ن لیگ کی حکومت نے 2016 میں 5 ریگولیٹری اداروں کو متعقلہ وزارتوں کے ماتحت کیا تھا۔ فوٹو: فائل

وفاقی حکومت نے 5 ریگولیٹری اداروں کا کنٹرول وزارتوں سے لے کر کابینہ ڈویژن کو دینے کی حکمت عملی تیار کر لی۔
وفاقی حکومت کی جانب سے نیپرا، اوگرا، پیپرا، پی ٹی اے اور فریکوئنسی ایلوکیشن بورڈ کا انتظامی کنٹرول وزارتوں سے واپس لینے کی تجویز سامنے آئی ہے۔
مسلم لیگ ن کی حکومت نے 2016 میں 5 ریگولیٹری اداروں کو متعقلہ وزارتوں کے ماتحت کیا تھا۔
حکومت نے پانچوں ریگولیٹری اداروں کا کنٹرول وزارتوں سے لیکر کابینہ ڈویژن کو دینے کی حکمت عملی تیار کر لی ہے۔
حکومت کی جانب سے نیپرا کا انتظامی کنٹرول پاور ڈویژن سے اور اوگرا کا انتظامی کنٹرول پیٹرولیم ڈویژن سے واپس لینے کی تجویز دی گئی ہے۔
اسی طرح پیپرا کا انتظامی کنٹرول وزارت خزانہ سے واپس لینے کی تجویز بھی سامنے آئی ہے۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ اداروں کو دوبارہ کابینہ ڈویژن کے ماتحت کرنے کے لیے رولز آف بزنس میں ترمیم کی جائے گی۔
ذرائع کا بتانا ہے کہ وزارت قانون نے 5 اداروں کو کابینہ ڈویژن کے ماتحت کرنے کی تجویز سے اختلاف کر دیا۔

تبصرے
Loading...

اس ویب سائٹ پر آپ کے تجربے کو بہتر اور سہل بنانے کے لیے کوکیز استعمال کی جاتی ہیں۔ اگر آپ کوکیز کے استعمال سے مطمئن ہیں تو قبول ہے کہ بٹن پر کلک کیجئے قبول ہے